بڑے اسلامی ملک نے غیرازدواجی تعلقات کو بالآخرقانوناً جرم قراردیدیا

بڑے اسلامی ملک نے غیرازدواجی تعلقات کو بالآخرقانوناً جرم قراردیدیا جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) بڑے اسلامی ملک انڈونیشیاءمیں غیرازدواجی جنسی تعلق کو قانوناً جرم قرار دے دیا گیا۔ نجی ٹی وی چینل 24نیوز کے مطابق انڈونیشیاءکی پارلیمان نے آج منگل کے روز کئی فوجداری قوانین منظور کیے، جن میں شادی سے قبل جنسی تعلق کے خلاف قانون بھی شامل ہے۔ تمام قوانین کو پارلیمان میں بھاری اکثریت سے منظور کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق آج تک انڈونیشیاءمیں جو قوانین رائج تھے ان میں سے زیادہ تر نیدرلینڈز کے نوآبادیاتی قوانین تھے، جنہیں اب جا کر تبدیل کیا گیا ہے۔ ان نوآبادیاتی قوانین میں زنا بالجر قابل سزا جرم تھا مگر شادی سے پہلے رضامندی کے ساتھ جنسی تعلق پر پابندی نہیں تھی۔ انڈونیشیاءکے قانون و انسانی حقوق کے نائب وزیر ایڈورڈ عمر شریف نے نئے قوانین کی منظوری کے بعد کہا کہ ”نیدرلینڈز سے آزادی حاصل کرنے کے بعد 59سالوں سے ہم اس دن کا انتظار کر رہے تھے۔“انہوں نے بتایا کہ نئے قوانین کا اطلاق انڈونیشیاءکے شہریوں اور غیرملکیوں پر یکساں طور پر ہو گا۔ مزید : بین الاقوامی –
Source : https://dailypakistan.com.pk/06-Dec-2022/1517264

اپنا تبصرہ بھیجیں