رواں سال5لاکھ میٹرک ٹن سے زائدکنو برآمد ہوا طارق رحیم

  رواں سال5لاکھ میٹرک ٹن سے زائدکنو برآمد ہوا، طارق رحیم فیصل آباد (اے پی پی)سٹرس فروٹ مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کے ترجمان طارق رحیم نے کہا ہے کہ حکومت ترشاوہ پھلوں کے باغبانوں کو جدید ٹیکنالوجی فراہم کرے،اس کے نتیجے میں  ترشاوہ پھلوں کی پیداوار میں مزید اضافہ  کیاجاسکتاہے۔ ترجمان طارق رحیم نیاے پی پی کو بتایاکہ  پاکستان میں مالٹے کی اقسام میں سیلسٹیانہ، مارش ارلی، ٹراکو، گریپ فروٹ کی اقسام میں شیمبر، ریڈ بلش،ترشاوہ پھلوں کی مخلوط اقسام میں فری مانٹ، فیئر چائلڈ،لیمن کی اقسام میں ایوریکا لیمن اور لائمز کی اقسام میں تہیتی لائم نے بہترین نتائج دیئے ہیں۔  جن کی اوسط پیداوار 450پھل فی درخت تک ہے اورملک میں ترشاوہ پھلوں کا قابل کاشت رقبہ ایک لاکھ 99ہزار ہیکٹرز تک پہنچ گیاجبکہ پیداوار بھی 21لاکھ ٹن سالانہ ہو گئی نیزرواں سال5لاکھ میٹرک ٹن سے زائدکنو برآمد کرکے 123.7ملین ڈالر ز سے زائد زرمبادلہ حاصل کیاگیا۔حکومت ترشاوہ پھلوں کے باغبانوں کو جدید ٹیکنالوجی فراہم کرے،اس کے نتیجے میں  ترشاوہ پھلوں کی پیداوار میں مزید اضافہ بھی کیاجاسکتاہے۔  پھلوں نے بین الاقوامی فروٹ مارکیٹس میں اپنی اہمیت کے لحاظ سے ایک نئی جہت حاصل کرلی ہے کیونکہ یہ پھل نہ صرف اپنے اندر انسانی صحت کو برقرار رکھنے کے حوالے سے بہترین غذائی عناصر کا مجموعہ ہے بلکہ کینسر، بلند فشار خون، افعال جگر ومعدہ کی درستگی اور ان بیماریوں کے خلاف بھر پور قوت مدافعت پیدا کرنے کا بھی حامل ہے۔ انہوں نے بتایاکہ ماہرین زراعت کی کاوشوں سے بغیر بیج یا بہت کم بیجوں والی نئی اقسام کی کاشت کے شاندار نتائج حاصل ہوئے۔ مزید : کامرس –
Source : https://dailypakistan.com.pk/05-Dec-2022/1516526

اپنا تبصرہ بھیجیں